55

”تمام سیکنڈلز ، دھرنوں اور عدالتی فیصلوں کا فائدہ بس یہ ہوا کہ ۔۔۔“جبران ناصر نے ایسی بات کہہ دی کہ عمران خان بھی شرمندہ ہو جائیں گے

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن )سپریم کورٹ نے انتخابی اصلاحات 2017 کافیصلہ جاری کر دیاہے جس پر میڈیا نمائندوں کے علاوہ سماجی شخصیات بھی اپنا اپنا نظریہ لوگوں تک پہنچا رہے ہیں اور اسی حوالے سے معروف سماجی کارکن اور بلاگر جبران ناصر نے بھی حالیہ فیصلے پر اپنا تجزیہ ٹویٹر پر جاری کیاہے ۔
تفصیلات کے مطابق جبران ناصر کاٹویٹر پر جاری اپنے پیغام میں کہناتھا کہ تمام سکینڈلز ،دھرنوں ، ترمیموں اورعدالتی فیصلوں کے بعد صرف فائدہ یہ ہواہے کہ طاقت کی منتقلی بڑے بھائی سے چھوٹی بھائی کو ہوئی ہے کیونکہ یہاں پر کوئی نظریاتی مقابلہ ہے اور نہ ہی کوئی مخالف منظم تحریک ہے ،ہمار ے لیڈرز کو انا کی جنگیں جیتنے کے علاوہ کچھ اور نظر ہی نہیں آتا ۔ان کا کہناتھا کہ کاش میرے ملک کی سیاسی پارٹیاں آپس میں تصادم کے بجائے اگر اپنی کارکردگی پر توجہ دیتی تو نہ الیکشن جیتنے کیلئے حریفوں کو نااہل کروانا پڑتا اور نہ حریفوں کی برائی ،مگر تنقید کرنا آسان ہے اور خدمت کرنا محنت طلب اور لیڈر ہمارے سست ہیں ۔
واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے میں کہاہے کہ جو شخص آئین کے آرٹیکل 62 اور 63 پر پورا نہیں اترتا وہ پارٹی کی سربراہی نہیں کر سکتا جس کے بعد نوازشریف وزارت عظمیٰ کے علاوہ پارٹی صدارت سے بھی ہاتھ دھو بیٹھے ہیں ۔یاد رہے کہ 28 جولائی 2017 کو سپریم کورٹ نے نوازشریف کو وزارت عظمیٰ سے نااہل قرار دیا تھا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں